سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

حاکم کے حکم کا نافذ ہونا [حکم اور فتوی]

سوال: کیا حضرت عالی حاکم کے حکم کو نافذ سمجھتے ہیں لہذا اگر کوئی مرجع حکم دے تو اس پر عمل کرنا سب کے اوپر یہاں تک کہ دوسرے مراجع پر بھی واجب ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : سب پر عمل کرنا واجب ہے سوائے ان موارد کے جن میں اسکے خلاف کا یقین ہو۔

متجزی مجتہد کی تقلید [مجتهد کے شرایط]

سوال: کیا مرجع کو مجتہد مطلق ہونا چاہئے یا متجزی بھی ہو سکتا ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : متجزی کی تقلید میں اشکال ہے ۔

خواتین کا اجتہاد [احکام جانناضروری ہے]

سوال: کیا عورت اسلامی علوم کو حاصل کرکے اجتہاد کے درجے تک پہنچ سکتی ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : کوئی حرج نہیں ہے اور ممکن ہے کہ اجتہاد کے درجے تک پہنچ جائے ۔

مجتہد عورت کی تقلید [مجاز وغیر مجاز تقلید]

سوال: اگر کوئی عورت اجتہاد کے مقام تک پہنچ جائے تو کیا اس پر بھی تقلید حرام ہے؟
جواب دیدیا گیا: جواب : اس مسئلہ میں عورت اور مرد کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے ۔

ہم مرتبہ مجتہد کی طرف رجوع کرنا [تقلید بدلنا]

سوال: کیا ایک مرجع سے دوسرے مرجع کی طرف رجوع کرنا آپ جایز سمجھتے ہیں جبکہ دونوں مرجع مساوی ہوں ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : جایز نہیں ہے ۔

میت کی تقلید پر باقی رہنے کے مراتب [میت کی تقلید پر باقی]

سوال: ایک شخص کسی مرجع کی تقلید کرتا تھا اسکے انتقال کے بعد دوسرے زندہ مرجع کی اجازت سے پہلے والے مرجع کی تقلید پر باقی رہا ہے اسکے بعد دوسرے مرجع کا بھی انتقال ہوگیا اب وہ تیسرے مرجع کی تقلید کر رہا ہے جو زندہ ہے کیا اب زندہ مرجع کی اجازت سے پہلے والے مرجع کی تقلید پر باقی رہے یا دوسرے مرجع کی ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : پہلے مرجع کی تقلید پر باقی رہے ۔

متجزی مجتہد کی تقلید [مجاز وغیر مجاز تقلید]

سوال: مجتہد پر تقلید حرام ہے تو کیا وہ طلاب و فضلا بھی اس مسئلہ میں شامل ہیں جوکچھ مسائل میں مجتہد ہیں ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : یہ حکم مجتہد مطلق ( جو فقہ کے تمام موضوعات میں اجتہاد کی صلاحیت رکھتا ہو) اور متجزی ( یعنی جو فقہ کے بعض موضوعات میں صاحب نظر ہو ) دونوں کو شامل ہے۔

تقلید کے واجب ہونے کی دلیل [تقلید کے معنی]

سوال: مہربانی فرماکر بتائیے کہ تقلید کیوں واجب ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : عقلی دلیل اور دنیا کے تمام عقلاء کی بنا پر کہ جاہل کو ہر مساٴلہ میں عالم کی طرف رجوع کرنا چاہئے کیا آپ جب مریض ہوتے ہیں تو کیا ڈاکٹر کے حکم پر عمل نہیں کرتے لہذا دین کے احکام کو بھی اس کے ماہرین سے حاصل کرنا چاہئے۔

جدید مسائل میں زندہ مجتہد کی تقلید [میت کی تقلید پر باقی]

سوال: میں حضرت آیت اللہ العظمی اراکی ( رضوان اللہ تعالی علیہ ) کی تقلید کرتا تھا اور ان کے انتقال کے بعد آپ کے فتوے کے مطابق انکی تقلید پر باقی ہوں تو کیا ضروری ہے کہ جو نئے مسائل پیش آئیں وہ حتماً آپ سے پوچھوں یا میں دوسرے مراجع کی طرف بھی رجوع کرسکتا ہوں اور اگر میں نے کسی دوسرے کی طرف رجوع کیا تو کیا میں پھر ان سوالات کو اس سے پوچھ سکتا ہوں جبکہ میں آپ سے کچھ استفتائات کرچکا تھا اور ان میں سے کچھ پر عمل بھی کرچکا ہوں ۔
جواب دیدیا گیا: جواب : چونکہ آپ نے ہماری طرف رجوع کیا ہے لہٰذا نئے مسائل کو بھی ہم سے پوچھیں۔

دریا کے پانی سے طہارت کرنا [مضاف پانی]

سوال: خلیج فارس (Persian Gulf)کا پانی، دریای عمان اور دوسرے دریاوٴں کے جن میں نمک کی مقدار بہت زیادہ ہے اس طرح کہ ہر میٹر مکعب میں تین ہزار دو سو کیلو گرام نمک موجود ہے ۔ کیا یہ پانی مضاف پانی کا حکم رکھتا ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : اس طرح کا پانی مضاف نہیں ہے اور ایسے پانی سے دھلنا طہارت کا باعث بنتاہے ۔

کنویں کے پانی میں نجاست کا اثر انداز ہونا [مطلق پانی]

سوال: خوزستان کے دیہاتوں میں سے ایک دیہات میں قلیل پانی کے تین کنوئیں ایک دوسرے کے نزدیک ہیں ، ان میں سے ایک کنوئیں میں کتے نے لعاب دہن گرایا ہے اور دوسرے کنوئیں میں نجس چیز گر گئی ہے لیکن تیسرا کنواں پاک ہے لیکن ہمیں نہیں معلوم کہ ان تینوں میں سے کونسا کنواں پاک ہے ؟ اس صورت میں کہ شبہہ ، شبہ محصورہ ہے۔ کیا تینوں سے اجتناب ضروری ہے ؟
جواب دیدیا گیا: اگر کنوئیں معمولی ہوں کہ ان میں سے پانی ابلتا ہو تو نجس چیز کے گرنے سے پانی نجس نہیں ہوتا مگر اس صورت میں جب ان کا رنگ ، ذائقہ یا بو تبدیل ہوجائے ۔

بیت الخلاء کے صاف ٹینک کی طہارت [صاف شده پانی کاحکم]

سوال: نجس اور گندے پانی کا صاف و شفاف پانی میں تبدیل ہونا صاف ہونا جو بعض کارخانوں میں انجام دیا جاتا ہے ، کیا یہ پانی پاک ہے ؟
جواب دیدیا گیا: اس میں اشکال ہے مگر یہ کہ جاری پانی یا کر پانی کی کافی مقدار کے ساتھ ملا ہوا ہو ۔

کپڑے دھونے کی مشین سے نجس ہاتھوں کا دھونا [کپڑےدهونے کی مشین]

سوال: کیا وہ کپڑے ، جو کپڑے دھونے والی مشین سے دھوئے جاتے ہیں اور وہ مشین (آٹو میٹک Automatic ہو) خود ہی چند بار کپڑوں کو دھوتی ہو اور ان میں سے پانی نکالتی ہو ) پاک ہیں ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : پاک ہیں چاہے کپڑے دھوتے وقت نل کے پانی سے متصل ہو یا پانی کے قطع ہونے کے بعد دھلنا شروع کرے ۔

حائض کے احکام [جو کام حایض پر حرام هیں]

سوال: سوال۸۴۔ کیا امام رضا علیہ السلام کی طیب و طاہر ضریح کے اطراف ایوانوں میں ، کسی خاتون کا حالت حیض میں داخل ہونا جائز ہے ؟ گرچہ وہ قبر اقدس کو دیکھے اور ضریح کے نزدیک ہو؟
جواب دیدیا گیا: جواب :کوئی اشکال نہیں لیکن حرم میں داخل نہ ہو۔

حیض کی [پاک هونے کے بعد اور غسل سے پهلے جماع و طلاق]

سوال: سوال ۸۶۔ کیاخون حیض کے بند ہونے کے بعد اور غسل حیض کرنے سے پہلے عورت کے ساتھ جماع کرنا جائزہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب : جائز ہے لیکن احتیاط مستحب یہ ہے کہ جماع نہ کرے ۔

حیض کا وہ خون جو بچہ کی غذا بنتا ہے [حیض کے مختلف مسایل]

سوال: سوال ۸۸۔ مسئلہ ۴۲۶میں آپ نے تحریر فرمایاہے :( حیض وہ خون ہے جو ہر مہینے چند روز عورت کے رحم سے نکلتا ہے اورحمل کے استقرار کے بعد سے بچہ کی غذا بنتا ہے ) اس مسئلہ کی خصوصاً ذیل میں دی گئی وضاحت کو ملحوظ رکھتے ہوئے ، علمی معیار کے ساتھ تطبیق دینا مبہم ہے ، یعنی روشن نہیں ہے لہٰذا خواہشمندہوں کہ مزید وضاحت فرمائیے ! اس لئے کہ اس بالغ عورت کی ماہانہ عادت ( ماہواری) یا ئسہ ہونے سے پہلے درج ذیل مراحل پر مشتمل ہوتی ہے :
الف: رحم کے حجم کے بڑھنے کا مرحلہ ؛ اس مرحلہ میں ہارمون اسٹروجن کے مترشح ہو نے کی وجہ سے ، عورت کا رحم ضخیم ہوجاتا ہے اور رحم کے اطراف کا راستہ بھی اس لئے ضخیم ہوجاتا ہے کہ رحم،حمل کے لئے تیار ۔
ب: اگر حاملہ ہوجائے جنین تشکیل پاجائے تو یہ موجودہ جنین ، رحم کی دیوار کے قریب قرار پاتا ہے ، اس جگہ پر یہ جنین کچھ عرصہ تک ، خون میں پائے جاجانے والے غذائی مادہ سے ، خوراک حاصل کرتا ہے ، اور رشد و نموپاتا ہے ، حقیقت میں یہ جنین خود خون کو اپنی غذا اور خوراک نہیں بناتا بلکہ وہ آکسیجن اور غذائی مادہ جو خون میں ہوتا ہے ، اس سے خوراک حاصل کرتا ہے ۔
جواب دیدیا گیا: جواب: تقریباً جنین کی لانہ سازی کے تین ہفتے کے بعد جفت تشکیل پاتا ہے ، اس مرحلہ میں جفت کا وظیفہ رحم کی ضخیم شدہ دیوار سے، بند ناف کے ذریعہ ، خوراک اور آکسیجن، حاصل کرنا ہے ۔اسی طرح جنین کی حیاتی فعالیت سے حاصل شدہ ، کاربنک گیس کو ماںکے خون میں منتقل کرتا ہے اور ا س بطن مادر میں موجود جفت کا دوسرا وظیفہ، مادری ماہا رمون یاپرجسترون کو مترشح کرنا ہے ، جس سے ماہواری بند ہوجاتی ہے ۔
د:اگر حاملہ نہ ہوسکے، تورحم کی پر خون اور ضخیم شدہ دیوار گرنا اوربہنا شروع ہوجاتی ہے ، جو ماہواری کے نام سے مشہور ہے ، خون بند ہوجانے کے بعد ، رحم دوبارہ نئے طریقہ سے استقرار حمل کے لئے تیار ہوجاتا ہے یعنی پُرخون اور ضخیم ہونا شروع ہوجاتا ہے لہٰذا جب ایک عورت حاملہ ہو جاتی ہے ، تو ہارمون کے مترشح ہونے کی وجہ سے جس کا تذکرہ گزرچکا ہے، معمولاً اس عورت کو ماہواری نہیں آتی ، ( نہ یہ کہ وہ خون بچہ کی غذا بن جاتا ہے ) یعنی حقیقت میں خونریزی اور ماہواری ہوتی ہی نہیں ہے جو بچہ کی خوراک بن سکے ۔
ھ: یہ تمام مذکورہ مراحل ، مختلف ہارمون کے مترشح ہونے کے ذریعہ کنٹرول ہوتے ہیں لہٰذاان ہارمونس کو کسی خاتون کو خوراک کے طورپر کھلا نے یا انجکشن کے ذریعہ سے دئے جائیں تو بھی وہ خاتون حائض نہیں ہوسکتی یعنی اس طرح سے اسکو ماہواری نہیں آسکتی ، تو پھر کیسے ہو سکتا ہے کہ وہ خون بچہ کیغذا بن جاتا ہے ۔ ؟
جواب: مقصود یہ نہیں ہے کہ رحم سے خونر یزی ہوتی ہے جس کو بچہ نگل لیتا ہے بلکہ مقصود یہ ہے کہ حاملہ ہونے کی صورت میں ، خون ماں (حاملہ) کی رگوں میں ذخیرہ ہوجاتا ہے اور جفت وغیرہ کے ذریعہ،جنین کی طرف منتقل ہوجاتا ہے اور وہ آکسیجن اور خوراک کو بچہ ، اپنی ماں کے اسی خون سے حاصل کرتا ہے ، جیسا کہ بچہ کو دودھ پلانے کے زمانے میں بھی اکثر اوقات ، ماہواری نہیں ہوتی ، اس لئے کہ خون کا کچھ حصہ ، دودھ میں تبدیل ہو کر ، بچہ کی غذا بن جاتا ہے ۔ لہٰذ ااگر ہم کہیں کہ وہ خون ،بچہ کی غذا ہے ، تو مقصود یہ ہے ہم نے بیا ن کیا ہے وہ نہیں جو آپ نے تحریرکیا ہے ۔

ماھواری کے ایام میں مجنب ہو جانے کی صورت میں غسل جنابت کرنا [جنابت]

سوال: سوال ۸۷۔اگر کوئی خاتون حالت جنابت میں ہو اور ماہواری یعنی ماہانہ عادت کے ایام بھی آگئے ہوں یا ماھواری کے ایام میں مجنب ہو جائے کیا اسی حالت میں غسل جنابت کرسکتی ہے ؟
جواب دیدیا گیا: کوئی حرج نہیں ، غسل کرسکتی ہے ، غسل جنابت کرنے سے جنابت سے وہ پاک ہوجائے گی ، نیز مستحبی غسل بھی کرسکتی ہے ۔

میت کی تقلید کرنا [مرده مجتهدکی تقلید]

سوال: کیا مردہ مجتہد کی تقلید کر سکتے ہیں؟
جواب دیدیا گیا: جواب:احتیاط یہ ہے کہ تقلید کا آغاز مردہ مجتہد سے نہ کیا جائے لیکن میّت کی تقلید پر ان مسائل میں باقی رہا جا سکتا ہے کہ جن کو پہلے انجام دے چکا ہو یا انجام دینے کے لئے فتویٰ حاصل کرچکا ہو۔

کن مسائل میں میت کی تقلید کرسکتے ہیں [مرده مجتهدکی تقلید]

سوال: مردہ مجتہد کے کن فتووں پر عمل کیا جاسکتا ہے؟
جواب دیدیا گیا: صرف ان مسائل میں مردہ مجتہد کے فتوی پر باقی رہ سکتے ہیں جس پر پہلے عمل کرچکے ہوں ۔

سوال: ۱۔ ٹنکی کے پائپ سے پانی کھولتے وقت جو سفید رنگ کا پانی نکلتا ہے
کبھی کبھی ٹنکی سے جو پانی نکلتا ہے اس کا رنگ بالکل سفید ہوتا ہے اور کچھ دیر اس کو برتن میں رکھنے کے بعد وہ پانی صاف ہو جاتا ہے ، کیا شروع میں یہ پانی مضاف ہوتا ہے؟
جواب : مضاف نہیں ہے بلکہ یہ ہوا کے بلبلے ہیں جو پانی کو اس رنگ کا کردیتے ہیں۔

۲۔ سمندر کے پانی سے پاک کرنا
اس بات کی طرف توجہ کرتے ہوئے کہ خلیج فارس(Persian Gulf)اور عمان کے سمندر اور دوسرے سمندروں کے پانی میں نمک بہت زیادہ ہوتا ہے اس طرح سے کہ اس کے ہر میٹرمکعب میں ۲۰۰/۳کیلو گرام نمک ہوتا ہے ، کیا اس پانی کو آب مضاف کہیں گے؟
جواب : اس طرح کے پانی مضاف نہیں ہیں اور ان سے کسی چیز کو دھویا جائے تو وہ پاک ہوجائے گی۔

۳۔ ٹنکی کے پائپ میںزنگ وغیرہ لگ جانے کی وجہ سے پانی کا متغیر ہوجانا
کبھی کبھی ٹنکی سے جو پانی نکلتا ہے اس کا زنگ یا کسی اور چیز کی وجہ سے رنگ بدل جاتا ہے تو کیا یہ پانی مضاف ہے؟ اور اس سے وضو کرنا جائز ہے؟
جواب : ایسا پانی مضاف نہیں ہے اور اس سے وضو کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

۴۔ پیشاب کی جگہ کو پانی میں سرکہ ملا کرپاک کرنا
ایک عورت کو ڈاکٹروں نے بتایا کہ وہ پانی میں سرکہ ملا کر اس سے طہارت کرے، کیا ایسے پانی سے طہارت کی جاسکتی ہے یا وہ پانی مضاف ہے اور وہ پاک نہیں کرسکتا؟
جواب : اگر پانی میں سے سرکہ کی بو آرہی ہو تو اس سے پاک نہیں ہوگا ، اس کا طریقہ یہ ہے کہ پہلے پیشاب کے مقام کو خالص پانی سے پاک کرلے اس کے بعد سرکہ کے پانی سے اس مقام کو دھو لے۔
جواب دیدیا گیا:

ٹنکی کے پائپ سے پانی کھولتے وقت جو سفید رنگ کا پانی نکلتا ہے [مضاف پانی]

سوال: کبھی کبھی ٹنکی سے جو پانی نکلتا ہے اس کا رنگ بالکل سفید ہوتا ہے اور کچھ دیر اس کو برتن میں رکھنے کے بعد وہ پانی صاف ہو جاتا ہے ، کیا شروع میں یہ پانی مضاف ہوتا ہے؟
جواب دیدیا گیا: جواب : مضاف نہیں ہے بلکہ یہ ہوا کے بلبلے ہیں جو پانی کو اس رنگ کا کردیتے ہیں۔
کل صفحات : 103