واجب نماز کے لئے طواف کو کامل کرنے سے پہلے ترک کرنا
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

واجب نماز کے لئے طواف کو کامل کرنے سے پہلے ترک کرنا

سوال: اس شخص کا کیا حکم ہے جس کا طواف درمیان میں سے ہی قطع ہو گیا ہو یا اس نے نماز کے لئے طواف درمیان سے چھوڑ دیا ہو یا ان دونوں صورتوں میں ، آدھے طواف کے بعد یا آدھے سے پہلے ایسا کیا ہو تو اس کا کیاحکم ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب :۔ جائز بلکہ مستحب ہے کہ واجب نماز کے لئے نما زکی فضیلت کے وقت میں یا نماز جماعت میں شامل ہونے کے لئے طواف کو قطع ( چھوڑدے ) اور نماز کے تمام ہونے کے بعد ، طواف کا کامل کرے اور اس کے باقی دور ( چکر) پورا کرے اور آدھے طواف سے زیادہ ہونا معتبر نہیں ہے ۔

منسلک صفحات

طواف کے جن مسائل میں مردہ مجتہد کی تقلید کی تھی ان مسائل میں زندہ مجتہد کے فتوی پر عمل کرنا

حج وعمرہ کے طواف کا اعادہ کرتے وقت تربیت کی رعایت کرنا

جس شخص نے طواف نساء نہیں کیا اور اسی عالم میں عقد نکاح کرلے

بے وضو ( و بے غسل) طواف کرنا

واجب نماز کے لئے طواف کو کامل کرنے سے پہلے ترک کرنا

CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 989