بے وضو ( و بے غسل) طواف کرنا
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

بے وضو ( و بے غسل) طواف کرنا

سوال: ایک شخص عمرہ مفردہ یا عمرہ تمتع میں ، تقصیر کے بعد ، احرام سے خارج ہو گیا ہے چند روز کے بعد اور دوسرے احرام سے پہلے متوجہ ہوا کہ طواف اور نماز طواف میں باطہارت نہیں تھا ، کیا دوبارہ احرام باندھے یا معمولی لباس میں طواف اور نماز کا اعادہ کرنا ، جائز ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب :۔ احرام کا لباس پہنا واجب نہیں ہے اور احتیاط واجب یہ ہے کہ سعی اور تقصیر کابھی اعادہ کرے ۔

منسلک صفحات

طواف کے جن مسائل میں مردہ مجتہد کی تقلید کی تھی ان مسائل میں زندہ مجتہد کے فتوی پر عمل کرنا

حج وعمرہ کے طواف کا اعادہ کرتے وقت تربیت کی رعایت کرنا

جس شخص نے طواف نساء نہیں کیا اور اسی عالم میں عقد نکاح کرلے

بے وضو ( و بے غسل) طواف کرنا

واجب نماز کے لئے طواف کو کامل کرنے سے پہلے ترک کرنا

CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 990