امام علی ( علیہ السلام) کی اعلمیت پرتابعین کی گواہی
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

امام علی ( علیہ السلام) کی اعلمیت پرتابعین کی گواہی

سوال: تابعین میں سے کن افرادنے حضرت علی (علیہ السلام) کی اعلمیت پر گواہی دی ہے؟
اجمالی جواب:
تفصیلی جواب: تابعین میں ایسے افراد موجود تھے جنہوں نے حضرت علی (علیہ السلام) کے علم و دانش کی اعلمیت، افضلیت پر گواہی دی ہے یہاں پر ہم کچھ تابعین کی طرف اشارہ کرتے ہیں:
۱۔ سعیدبن مسیب
دولابی ” الکنی والاسماء“ میں اپنی سند کے ساتھ سعید بن مسیب سے نقل کیا ہے: ما کان احد بعد رسول اللہ (صلی اللہ علیہ و آلہ) اعلم من علی بن ابی طالب (۱) ۔ رسول اسلام کے بعد کویی بھی حضرت علی (علیہ السلام) کے علاوہ افضل اور اعلم نہیں تھا۔
اورا س سے نقل ہوا ہے : ما کان احد من الناس یقول: سلونی غیر علی بن ابی طالب (۲) علی علیہ السلام کے علاوہ کویی نہیں تھا جو یہ کہتا: جو کچھ چاہو مجھ سے سوال کرلو۔
۲۔ عطای
عبدالملک بن ابی سلیمان کہتا ہے: میں نے عطاء سے کہا: اکان فی اصحاب محمد (صلی اللہ علیہ و آلہ) احد اعلم من علی بن ابی طالب؟ قال: لا واللہ ما اعلمہ (۳) کیا محمد (صلی اللہ علیہ و آلہ) کے اصحاب کے درمیان حضرت علی بن ابی طالب سے زیادہ کویی اعلم تھا: اس نے کہا: ہرگز نہیں، خدا کی قسم میں کسی ایسے کو نہیں پہچانتا۔
۳۔ مغیره بن مقسم
ابن عبدالبر اپنی سند کے ساتھ اسماعیل بن ابی خالد سے نقل کرتا ہے کہ اس نے کہا: مغیرہ بن مقسم نے خداکی قسم کھایی کہ علی (علیہ السلام) نے جو قضاوتیں کی ہیں ان میں سے کسی ایک میں بھی غلطی نہیں کی ہے (۴) ۔ (۵) ۔
حوالہ جات:
۱۔ الکنی والاسماء، ج۱، ص ۱۹۷۔
۲۔ الاستیعاب، ج۳، ص ۱۱۰۲، مطبع قاہرہ۔
۳۔ الاستیعاب، ج ۳، ص ۱۱۰۲۔
۴ ۔ الاستیعاب، ج ۳، ص ۱۱۰۲۔
۵۔ علی اصغر رضوانی، امام شناسی و پاسخ بہ شبہات (۲)، ص ۳۷۳۔
    
تاریخ انتشار: « 1396/01/10 »

منسلک صفحات

امام علی ( علیہ السلام) کی اعلمیت پرتابعین کی گواہی

امام علی ( علیہ السلام) کی اعلمیت پر اصحاب کی گواہی

CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 870