سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

لکڑی پر تصویریں کندہ کرنا [مشاغل]

سوال: بندہ ایک مدت سے لکڑی کے اوپر تسویروں کو برجستہ صورت میں حک کرتا ہوں اور اس طریقہ سے اسرار بعاش کرتا ہوں چونکہ میں نے سن رکھا تھا کہ جاندار کا کامل مجسمہ بنانا بنانا تو حرام ہے لیکن بدن کا کچھ حصہ بنانا حرام نہیں ہے اور وہ بھی لکڑی پر چک (یعنی برجستہ کرنے کے صورت میں کیا بندہ کا اس طریقہ سے اسرار معاش کرنا شریعت کی رو سے جائز ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب ۔اس طرح کے برجستہ (ابھرے ہوے)نقوش میں شرعاً اشکال ہے لیکن کوشش کرو کہ ایسے نقش و نگار نہ ہوں جن سے غیر اسلامی دین و مذہب کی ترویج ہوتی ہو یا جو تصویریں اخلاق کے فاسد ہونے کا سبب ہوں

مجسمہ بنانے کا حکم [مشاغل]

سوال: انسان یا کسی حیوان کا کامل مجسمہ بنانے کا کیا حکم ہے نیز نقاشی یا آرٹ کیسا ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب ۔مجسمہ بنانے میں اشکال ہے اور آرٹ جائز ہے

مجسمہ کی خرید و فروخت [مشاغل]

سوال: کیا ٓرٹ نقاشی اور مجسمہ بنانے کا حرام ہونا اس وجہ سے ہے کہ اس سے شرک آمیز برداشت ہوتی ہے اور بت پرستی کا پہلو پایا جاتا ہے؟اس صورت میںآج کے زمانے میں تو یہ امور عام لوگوں میں بت پرست کی ذہنیت کو ایجاد نہیں کرتے بلکہ ہنر کے عنوان سے جانے پہچانے جاتے ہیں اور استعمال کئے جاتے یں ان میں مشغول ہونا کیسا ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب۔مجسمہ بنانا اور اس کیخرید و فروخت میں بہر حال اشکال ہے مگر اس صورت میں کہ جب کھیلونوں کی حیثیت رکھتے ہوں .

شعبدہ بازی (نظر بندی ) کے ذریعہ آمدنی [مشاغل]

سوال: شعبدہ بازی کو اپنے کام کاج کی حیثیت سے اپناے کا کیاحکم ہے ؟کیا ایسی نشستوں شریک ہونا جہاں شعبدہ (نظر بندیہاتھ کی صفائی )کیا جاتا ہے اشکال رکھتا ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب جو کھیل نمائش سر گرمی تفریح کے عنوان سے بعض نشستوں میں مشاہدہ میں آتے ہیں اور کسی شخص کی چالاکی اور ہاتھ کی صفائی کو ظاہر کرتے ہیں اور اس کے علاوہ کوئی دوسرا مقصد نہیں ہوتا لیکن اگر لوگوکو دھوکا دینے کے لئے ہو تو یہ بھی جادو کی ایک قسم ہے کہ جس سے کمائی کرنا حرام ہے اور ایسی نشست میں شریک ہونا بھی حرام ہے

فال نکالنے کے ذریعہ آمدنی [مشاغل]

سوال: ملک سے باہر بعض لوگ جامع الدعوات سے فال نکالتے ہیں یا بارہ برج (ستاروں ) سے گذشتہ کی خبر یا آئندہ و مستقبل کی پیشین گوئی یا اپنے پاس رجوع کرنے والوں کی بیماری کے بارے میں خبر دیتے ہیں اور کہتء ہیں تم فلاں مشکل میں گرفتار ہو یا آئندہ ہو جاو گے اس قدر رقم مجھے دو تاکہ تمہارے لئے ایک ٹھیک ٹھاک دعا لکھ دوں اور اسی طرح لڑکے اور لڑکیوں کے درمیان محبت ہونے اور میاں بیوی کے درمیان محبت ہونے کے لئے اور دیوانوں اور جن زدہ لوگوں کے لئے (بھوت پریت کا اتارا کرنے کے لئے )دعائیں (تعویز )لکھتے ہیں اور اس کے عوض بہت سارای رقم دریافت کرتے ہیں ساتھ ساتھ نماز جمعہ اور جماعت میں بھی شریک ہوتے ہیں آپ فرمائیں کہ اس کام کے عوض پیسے لینے کا کیا حکم ہے؟
جواب دیدیا گیا: جواب۔ ان کاموں کے بدلہ پیسا لینا جائز نہیں ہے .

دعا و تعویز کا کام [مشاغل]

سوال: کیا دعا (تعویز )لکھنا اور اسکے بدلے رقم دریافت کرنا جائز ہے ؟
جواب دیدیا گیا: جواب۔ اگر دعائیں شرعی اور آئمہ سے منقول ہوتی ہیں تو کوئی اشکال نہیں ہے ،لیکن خرافاتی اور پیشہور (تعویزوغیرہ) لکھنا جائز نہیں ہے

کتّے اور بلیوں کے علاج کے عوض اجرت وصول کرنا [مشاغل]

سوال: میں ایک جانوروں کا ڈاکٹر اور حیوانات کے علاج کے امور انجام دیتا ہوں، میرے کام کی ذمہ داری کو مدنظر رکھتے ہوئے حضور فرمائیں: نیچے دی گئی صورتوں میں کتّے اور بلّی کے معائنہ کے عوض آمدنی کے سلسلے میں کیا حکم ہے؟
۱۔ آوارہ کتّے اور بلّیاں
۲۔ پالتو کتّے اور بلّیاں جو معمولاً انسانوں کے ساتھ رہتے اور بہت سی مشکلات ایجاد کرتے ہیں۔
۳۔ وہ پالتو کتّے اور بلیاں جن سے شکار یا کوئی اور دوسرا کام لیا جاتا ہے۔
۴۔ وہ پالتو کتّے اور بلیاں جن کو گھر کی زینت یا محبت اور چاہت کے لئے گھر یا اس جگہ پر رکھا جاتا ہے جہاں وہ شخص کام کرتا ہے۔
جواب دیدیا گیا: اُن کتّے اور بلیوں کا علاج کرنا جن سے مشروع فائدہ ہو تو اس کے عوض اجرت لینے میں کوئی ممانعت نہیں ہے، ایسے ہی آوارہ جانور کہ اگر ان کو کنٹرول نہ کیا جائے تو بہت سی مشکلات کھڑی ہوجاتی ہیں۔

ٹیکسی یونین کی طرف سے معیّن شدہ کرایہ سے زیادہ لینا [مشاغل]

سوال: ٹیکسی یونین نے ہر جگہ کے لئے ایک کرایہ معیّن کررکھا ہے، اب اگر عام لوگ اُسی جگہ کے لئے دوسرا کرایہ معیّن کردیں جو یونین کے کرایہ سے فرق کرتا ہو تو کیا عرف عام کے مطابق عمل کیا جاسکتا ہے؟
جواب دیدیا گیا: اگر مذکورہ یونین ایک رسمی اور قانونی یونین ہو تو اس کی معیّن کردہ قیمت کے مطابق عمل کیا جائے۔

غیر ارادی طور پر کرایہ لیتے وقت ٹیکسی ڈرائیور کا ہاتھ نامحرم کے ہاتھ سے لگ جانا [مشاغل]

سوال: کرایہ لیتے وقت غیرارادی طور پر کئی بار اگر میرا ہاتھ نامحرم عورت کے ہاتھ لگ جائے تو اس کا حکم کیا ہے؟
جواب دیدیا گیا: حرام نہیں ہے؛ لیکن کوشش کریں کہ ایسا اتفاق نہ ہو۔

ملازمین کو نشہ کے ٹیسٹ پر مجبور کرنا [مشاغل]

سوال: کیا ایک ادارے کا رئیس ایک شیعہ اثنا عشری مسلمان نمازی کو نشہ کے ٹیسٹ کی وجہ سے کھڑے ہوکر اوربغیر طہارت کے ایک شیشی میں پیشاب کرنے پر مجبور کرسکتا ہے؟
جواب دیدیا گیا: نشہ کے عادی نہ ہونے کے ٹیسٹ کے لئے اس کام کی ضرورت نہیں ہے اور کوئی شخص بھی کسی دوسرے کو ایسے کاموں پر مجبور نہیں کرسکتا۔

وہ رقم جو دوکانوں کے مالکان کمپنی کے لئے سامان خریدنے والوں کو دیتے ہیں [مشاغل]

سوال: ایک شخص ایک کمپنی کے سامان خریدنے پر مقرر ہے، وہ ایک خاص دوکان سے خریداری کرتا ہے البتہ اس دوکان کی چیزیں دوسری دوکانوں سے سستے ریٹ پر ملتی ہیں، وہ شخص حتّی الامکان قیمت کم کراتا ہے، لہٰذا اس دوکان سے خریدنا اس کمپنی کے نفع میں ہوتا ہے لیکن دوکان کا مالک ایک خاص رقم اس خریدار کو اس لئے دیتا ہے تاکہ وہ ہمیشہ وہیں سے خریدے، مذکورہ رقم لینے کا کیا حکم ہے؟
جواب دیدیا گیا: اگر یہ پیسہ دوکاندار کی آمدنی میں سے ہو نیز خریدی ہوئی چیزوں کی قیمت میں اثر انداز نہ بھی ہو تو کوئی اشکال نہیں ہے۔

سرکاری ملازمین کی کمپنیوں کی سرمایہ گذاری میں شرکت [مشاغل]

سوال: اگر کوئی کمپنی سرکاری ملازمین یا بینک کی موقعیت سے مالی فائدہ اٹھانے یا اپنے منصوبے کی حمایت کی غرض سے کسی ملازم کو ہیئت مدیرہ کے رکن کے عنوان سے مقرر یا انتخاب کرے نیز کمپنی کے شیئرز اسے دے کر کمپنی کے سرمایہ میں شریک کرے اور وہ شخص کسی طرح بھی کمپنی کے قصد سے واقف ہوجائے، کیا وہ تنخواہ جو کمپنی اُسے دیتی ہے یا اُن شیئرز کا وہ فائدہ جو مذکورہ طریقے سے اس کے نام درج کیا جاتا ہے اس کے لئے حلال ہے؟ نیز وہ تنخواہ جو مذکورہ شخص اپنے اصلی دفتر سے وصول کرتا ہے اس کا کیا حکم ہے؟
جواب دیدیا گیا: اگر نیا کام اس کے پہلے کام کے لئے مزاحمت کا سبب نہ ہو اور اس کے معاہدہ کے خلاف بھی نہ ہو تواس کے لئے دونوں تنخواہیں حلال ہیں۔

ایسے شخص کے پاس کام کرنا جس کی آمدنی حرام ہے [مشاغل]

سوال: کیا ایسے شخص کے پاس کام کرنا جائز ہےجس کی آمدنی حرام پیسہسے ہوتی ہے؟
جواب دیدیا گیا: اگر یقین ہو کہ وہ آپ کی مزدوری حرام پیسے سے دیتا ہے تو جائز نہیں ہے۔

اجتماعی کاموں میں خواتین کی مصروفیت [مشاغل]

سوال: پرانے زمانے سے ہی گھر کے باہرکا کام مرد کے کاندھوں پر رہا ہے، اب بہت سے مردوں کی نادانی کی وجہ سے بعض اجتماعی مشغلوں کو کہ جہاں پر عورت کے ہونے کی ضرورت نہیں ہے، عورتوں کے سپرد کردئے گئے ہیں، کیا بعض خواتین کا مردوں کے کاموں کو اپنانا صحیح ہے حالانکہ طبیعت نے عورت اور مرد کے کاموں کو الگ الگ قرار دیا ہے؟
جواب دیدیا گیا: شرعی حدود کی رعایت کرتے ہوئے خواتین کا کام میں مصروف ہونا حرام نہیں ہے۔ لیکن اولاد کی تربیت کا مسئلہ عورتوں کے لئے سب سے مہم ہے۔

کوڑہ اٹھانے والوں کا لوگوں سے پیسہ لینا [مشاغل]

سوال: بہت سے کوڑہ اٹھانے والے اشخاص اس کے انھیں منسپلٹی تنخواہ دیتی ہے وہ فقیر اور عاجز بھی نہیں ہوتے اس کے باوجود پھر بھی وہ لوگوں سے اجرت کا مطالبہ کرتے ہیں، کیا ان کا ایسا کرنا جائز ہے؟
جواب دیدیا گیا: اگر پیسہ دینے والے اپنی مرضی سے انعام کے طور پر ان کوکچھ دے دیں تو کوئی ممانعت نہیں ہے۔

امداد جمع کرنے والے کمیٹی کے ملازمین کو لوگوں سے جمع شدہ مدد میں سے انعام دینا [مشاغل]

سوال: امام خمینی امدادیہ کمیٹی جب کوئی پروگرام کرتی ہے، جیسے ”جشن عاطفہ“ تو لوگوں سے جمع ہونے والی مدد اس میں سے ایک رقم اس کمیٹی کے کارکنان کو دی جاتی ہے، اس کام کا کیا حکم ہے؟
جواب دیدیا گیا: اس میں سے فقط ان کی محنتوں کی اجرت کو دیا جاسکتا ہے۔

اُن ملازمین کی تنخواہ جو اپنے وظیفہ پر عمل نہیں کرتے [مشاغل]

سوال: اگر پہرہ دار اپنے وظیفہ پر عمل نہ کرے (مثلاً صحیح وقت پر اپنی ڈیوٹی پر حاضر نہ ہو) کیا وہ پیسہ جو اس کے عوض لیتا ہے یا اُس کھانے میں جو وہ کھاتا ہے کوئی شرعی اشکال ہے؟
جواب دیدیا گیا: جو نوکر اپنے وظیفہ پر عمل نہ کرے اس کی تنخواہ میں اشکال ہے۔

ملازمین کو نکالنا [مشاغل]

سوال: ایک شخص ۱۴۔ ۱۵ سال سے ایک ادارہ میں کام کرتا ہے اور چونکہ اس کی تقرری ہوچکی ہے لہٰذا اُس کو وہاں سے نکالنے لئے ضروری ہے کہ پہلے اُسے ایک معیّن رقم دی جائے تاکہ وہ نکل سکے، کیا اس کو اس ادارہ سے نکالا جاسکتا ہے؟
جواب دیدیا گیا: جی ہاں، اگر وہ غلطی کرے اور احکامات کو قبول نہ کرے تو اس کو اخراج کرنے میں کوئی مانعت نہیں ہے، لیکن اس کے عرفی اور قانونی حقوق کو ادا کرنا ہونگے ۔

اُن ملازمین کی تنخواہ جن کا تقرر تعلّقات کی بناپر ہوا ہے [مشاغل]

سوال: سرکاری ادارے بہت سے اشخاص کو امتحان اور انٹرویو وغیرہ کے ذریعہ اور بہت سے افراد کو پارٹی بازی اور تعلّقات کی بنیاد پر ملازمت دیتے ہیں، اس طرح کہ اگر یہ تعلّقات نہ ہوتے تو دوسرے لوگوں کو امتحان یا انٹرویو کے ذریعہ ملازمت دی جاسکتی تھی، ایسے اشخاص کی سہولیات اور تنخواہ کا کیا حکم ہے جو تعلقات اور پارٹی بازی کی بنیاد پر مقرر ہوئے ہیں؟
جواب دیدیا گیا: یہ کام جائز نہیں ہے اور جو تنخواہ وہ وصول کریں گے اس میں اشکال ہے۔

کفار سے خرید و فروخت اور بلاد کفر میں کام کرنا [مشاغل]

سوال: آج کے زمانہ میں کفار کے ساتھ خرید و فروخت ، رفت و آمد اور ہلینڈ جیسے ملکوں میں کام کرنا جائز ہے یا نہیں ؟ کیا اس سے کفر و طاغوت کی مدد ہوتی ہے ؟
جواب دیدیا گیا: اگر جائز کام انجام دیں تو کوئی حرج نہیں ہے ۔
کل صفحات : 1