ابوبکر اور عمر کا مبارکباد دینا

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ذخیره کریں
 

ابوبکر اور عمر کا مبارکباد دینا

سوال:
اجمالی جواب:
تفصیلی جواب:

سوال : کیا ابوبکر اور عمر نے امیرا لمومنین علی (علیہ السلام) کو مبارکباد دی تھی؟
جواب : اہل سنت کے رجال حدیث، مفسر ین اور مورخین نے شیخین (ابوبکر و عمر) کی مبارکباد کو نقل کیا ہے ، ایک گروہ نے اس کو ارسال مسلم ، مرسل (۱) کے عنوان سے نقل کیا ہے اور ایک گروہ نے اس کو صحیح اسناد کے ساتھ نقل کیا ہے جس کے تمام راوی ثقہ ہیں ، اس کی سند پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) کے اصحاب میں سے کسی نہ کسی صحابی پر ختم ہوتی ہے جیسے ابن عباس،ابوہریرہ، براء بن عازب اور زید بن ارقم۔
مرحوم علامہ امینی (رحمة اللہ علیہ) نے کتاب الغدیر (۲) نے ایسے ۶۰ افراد کے نام بیان کئے ہیں جنہوں نے شیخین کی مبارکباد کو روایت کیا ہے جیسے :
۱۔ جنبلیوں کے راہنما امام احمد بن حنبل(متوفی ۲۴۱) ۔ (۳) ۔
۲۔ حافظ ابوجعفر محمد بن جریر طبری (متوفی ۳۱۰) انہوں نے اپنی تفسیر کی کتاب میں بیان کیا ہے (۴) ۔
۳۔ حجة الاسلام ابوحامد غزالی(متوفی ۵۰۵) (۵) ۔
۴۔ ابوالفتح اشعری شہرستانی (متوفی ۵۴۸) (۶) ۔
۵۔ فخر الدین رازی شافعی (متوفی ۶۰۶) (۷) ۔
۶۔ جلال الدین سیوطی ، متوفی (۹۱۱)، (۸) (۹) ۔


 


۱۔ یعنی اس کو مسلم اور یقینی جانتے ہیں اور اسی وجہ سے اس کو مرسلہ اور بغیر سند کے ذکر کیا ہے ، اس کے معنی یہ ہیں کہ یہ حدیث یقینی طور پر پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) سے صادر ہوئی ہے اور اس کی سند کی تحقیق ضروری نہیں ہے ۔
2 ـ (الغدیر 1/510 ـ 527).
3 ـ مسند احمد 4: 281 (5/355، ح 18011).
4 ـ تفسیر طبرى 3: 428.
5 ـ سرّ العالمین: 9 (ص 21).
6. الملل و النحل، چاپ شده در حاشیه الفِصَل ابن حزم 1: 220 (الملل والنحل 1/145).
7 ـ التفسیر الکبیر 3: 636 (12/49).
8 ـ جمع الجوامع میں اس کو روایت کیا ہے اور کنزالعمال 6: 397 (13/133، ح36420) میں اس طرح آیا ہے ۔
9- شفیعی مازندرانی / گزیده اى جامع از الغدیر، ص 78.

حوالہ جات:
تاریخ انتشار: « 1401/04/13 »
CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 905